”پہلے روزانہ گھر پھل، اب ادویات لائی جاتی ہیں“

Muhammad Dastagir 04 Mar, 2021 علاقائی

رحیم یار خان (نعیم بشیر چوہدری سے)صوبائی پارلیمانی سیکرٹری عشر و زکوۃٰ چودھری محمد شفیق نے کہا ہے کہ جن قوموں کے کھیل کے میدان آباد ہوں ان کے ہسپتال ویران ہوتے ہیں‘ پہلے روزانہ گھر پھل لائے جاتے تھے اب ادویات لائی جاتی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گورنمنٹ خواجہ فرید گریجویٹ کالج میں جنوبی پنجاب کے کالجز کے مابین ہونے والی ساؤتھ پنجاب کرکٹ لیگ کی افتتاحی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ڈائریکٹر کالجز ڈویژن بہاولپور پروفیسر محمد ابراہیم نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کرونا لاک ڈاؤن کے بعد یہ ٹورنامنٹ ایک خوشگوار آغاز ہے۔ انہوں نے کرکٹ لیگ کے لئے کئے گئے بہترین انتظامات پر خواجہ فرید کالج کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل بھٹی اور سپورٹس بورڈ کی کاوشوں کو سراہا اور طلبا کو جوش و خروش سے اس لیگ میں شرکت کی تلقین کی۔ پرنسپل پروفیسرڈاکٹر محمد اجمل بھٹی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اچھی تعلیم و تربیت کھیلوں کے بغیر ناممکن ہے۔ انہوں نے مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس تقریب کے بہترین انعقاد پر چیئرمین سپورٹس بورڈ پروفیسر عبدالغفار‘ پروفیسر طارق ندیم‘ پروفیسر محمد عاصم اور پروفیسر ذوالفقار علی نیازی کی کارکردگی کی تعریف کی۔ چیئرمین سپورٹس بورڈ پروفیسر عبدالغفار نے کرکٹ لیگ میں شرکت کرنے والے تمام کالجز کے کھلاڑیوں کو خوش آمدید کہا اور سپورٹس مین سپرٹ کو برقرار رکھنے کی ہدایت کی۔ افتتاحی میچ سے قبل کرکٹ لیگ میں شریک گورنمنٹ خواجہ فرید گریجویٹ کالج رحیم یار خان‘ گورنمنٹ گریجویٹ کالج شہباز پور روڈ‘ گورنمنٹ گریجویٹ کالج خانپور گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج خانپور‘ گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج سہجہ‘ گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج لیاقت پور‘ گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج ترنڈہ محمد پناہ‘ گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج منٹھار روڈ صادق آباد اور گورنمنٹ ایسوسی ایٹ کالج جمال دین والی روڈ صادق آباد کی ٹیموں نے مارچ پاسٹ کیا اور پہلا میچ کھیلنے والی ٹیموں کے کھلاڑیوں نے مہمانان خصوصی کے ساتھ گروپ فوٹو بنوائے۔ ٹورنامنٹ کا آغاز پارلیمانی سیکرٹری عشر و زکوۃ چودھری محمد شفیق نے ڈائریکٹر کالجز پروفیسر محمد ابراہیم کی بال پر سٹروک کھیل کر کیا۔ اس موقع پر ڈپٹی ڈائریکٹر کالجز پروفیسر سعدیہ رشید‘ اسٹنٹ ڈائریکٹر کالجز پروفیسر قمر اقبال‘ وائس پرنسپل ڈاکٹر خالد محمود‘ پروفیسر طارق ندیم‘ پروفیسر محمد عاصم‘ پروفیسر ظفر اقبال بسراودیگر بھی موجود تھے۔