ایران سے نمٹنے کیلئے امریکا اور اسرائیل کا پلان 'بی' کیا ہے؟

urduwebnews 15 Oct, 2021 عالمی

واشنگٹن(اردو ویب نیوز)امریکا اور اسرائیل نے کہا ہے کہ اگر ایران جوہری معاہدے کی بحالی کے لیے ایمانداری سے مذاکرات کی طرف نہیں لوٹتا تو وہ اس سے نمٹنے کے لیے’پلان بی‘ سوچ رہے ہیں۔ خبر رساں ایجنسیوں کے مطابق اے پی کے مطابق امریکی وزیر خارجہ اینتونی بلنکن اور اسرئیلی وزیر خارجہ یائیر لاپید کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان ’دیگر آپشنز‘ پر بات چیت شروع ہو گئی ہے۔ انہوں نے یہ تو نہیں بتایا کہ یہ آپشنز کیا ہیں تاہم ایسے بہت سے غیرسفارتی طریقے ہیں جن پر غور کیا جا سکتا ہے جیسے کہ پابندیوں کا دائرہ وسیع کرنا۔اسرائیل کبھی بھی جوہری معاہدے کا فریق نہیں رہا اور اس کے سابق وزیراعظم بنیامن نیتن یاہو اس معاہدے کےمخالف رہے ہیں۔ بلنکن اور لاپید کا یہ بیان متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ کے ہمراہ مشترکہ نیوز کانفرنس کے دوران سامنے آیا ہے۔ تینوں وزرائے خارجہ نے ’ابراہم اکارڈ‘ نامی معاہدے کا دائرہ وسیع کرنے پر اتفاق کیا۔ ابراہم اکارڈ نامی معاہدہ ٹرمپ کے دور حکومت میں طے پایا تھا جس کے تحت اسرائیل اور متحدہ عرب امارات اور دیگر عرب ریاستوں کے درمیان تعلقات معمول پر لائے گئے تھے۔