اے این پی نے پی ڈی ایم سے راہیں جدا کر لیں

Muhammad Dastagir 06 Apr, 2021 عالمی

پشاور:عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) نے اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) سے علیحدگی کا اعلان کردیا۔ پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے اے این پی کے مرکزی سینئر نائب صدر امیر حیدر ہوتی نے کہا کہ آج پارٹی کا ہنگامی اجلاس ہوا اور پارٹی کے مرکزی عہدیداروں اور اہم رہنماؤں نے شرکت کی اور ایجنڈا اے این پی کو بھیجا گیا جو شوکاز نوٹس تھارہنما اے این پی نے کہا کہ پوری قوم کو یاد دلانا چاہوں گا کہ پی ڈی ایم کیوں بنی تھی، بنیادی طور پر 20 ستمبر کو آل پارٹیز کانفرنس ہوئی تھی جہاں جوائنٹ ڈیکلیئریشن جاری کیا گیا تھا اور اس کے بعد چارٹر کے بنیادی اصول دوسرا کامن ایجنڈا تھا جس پر پی ڈی ایم قائم ہوئی تھی اور اے این پی آج بھی اس چارٹر کو مانتی ہے اور آئندہ بھی انہی اصولوں کی بنیاد پر اپنا سیاسی سفر جاری رکھیں گےانہوں نے کہا کہ اس تحریک کے آخری مرحلے میں ہم نے لانگ مارچ کرنا تھا اور اس کے لیے مارچ کی 30 سے 31 مارچ کی تاریخ دی تھی، استعفوں کی ٹائمنگ کی وجہ سے لانگ مارچ کو مؤخر کرنا پڑا اور استعفوں پر اے این پی کا مؤقف اس وقت بڑا واضح تھا کہ ہم مستعفی ہوں گے، اگر تمام اسمبلی سے ایک ساتھ مستعفی نہیں ہو سکتے ہیں تو پہلے قومی اسمبلی اور پھر صوبائی اسمبلیوں سے استعفے دیں گے۔ امیر حیدر ہوتی نے کہا کہ ہمارا مؤقف تھا کہ استعفوں کے بغیر لانگ مارچ میں وہ دم نہیں ہوگا اور یہ بھی کہا تھا کہ استعفوں کا اثر بھی تب ہوگا جب متفقہ ہوں گے اگر متفقہ نہیں ہوتے تو ہمیں انتظار کرنا چاہیے اور میری تجویز تھی استعفوں پر اتفاق تک لانگ مارچ مؤخر کیاجائے۔جس پر دیگر قائدین نے بھی اتفاق کیا۔