مملکت کو غیر مستحکم کرنے کا منصوبہ ناکام بنا دیا:اردن

Muhammad Dastagir 05 Apr, 2021 عالمی

عمان: اردن کے حکام نے کہا ہے کہ انہوں نے مملکت کو غیر مستحکم کرنے کا منصوبہ ناکام بنا دیا ہے جس میں شاہ عبداللہ دوئم کے ایک سوتیلے بھائی ملوث تھے اور کم ازکم 16 مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ڈان اخبار میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق نائب وزیراعظم ایمن صفدی کا کہنا تھا کہ حمزہ بن حسین اور دیگر نے اردن کی 'سلامتی کو مجروح' کرنے کے لیے غیر ملکی پارٹیز کے ساتھ کام کیا۔ حمزہ بن حسین سابق ولی عہد تھے جن سے بادشاہ نے 2004 میں یہ منصب واپس لے لیا گیا تھا۔واشنگٹن، خلیجی اتحادیوں اور عرب لیگ کی جانب سے فوری طور پر شاہ عبداللہ کی مغرب حامی حکومت کے لیے حمایت کا عزم ظاہر کیا گیا۔ قبل ازیں ہفتہ کے روز شہزادہ حمزہ بن حسین نے بی بی سی کے ذریعے ایک ویڈیو پیغام جاری کیا تھا جس میں انہوں نے اردن کے حکمران پر اقربا پروری اور کرپشن کا الزام عائد کیا اور کہا کہ انہیں نظر بند کردیا گیا ہے۔ سابق ولی عہد نے اپنا پیغام اردن کے دارالحکومت عمان میں اپنے محل سے بذریعہ سیٹیلائٹ لنک بھیجا۔