جو جیل نہیں جا سکتا وہ سیاست میں کیوں ہے؟،فضل الرحمان سیاستدانوں پربرس پڑے

Muhammad Dastagir 18 Mar, 2021 عالمی

اسلام آباد:پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان نے سیاستدانوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ جو جیل نہیں جا سکتا وہ سیاست میں کیوں ہے؟ یہ بزدلی نہیں، برداشت کا کام ہے۔جنگ میں مورچے بدلتے رہتے ہیں، ہم نئی حکمت عملی کے ساتھ حملہ کرنے کے لیے پیچھے آئے، سب ساتھ چلیں یا کوئی ایک الگ ہو جائے، تحریک نہیں رکتی۔ حکمران کب تک پچھلی حکومتوں پر الزام لگاتے رہیں گے۔ نااہلی تسلیم کریں، استعفا دیں اور گھر چلے جائیں۔ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ سیاست بزدلی کا نام نہیں حوصلے، برداشت اور امید کا نام ہے۔ عوامی سپورٹ سے صرف ایک سیاسی جماعت بھی تبدیلی لا سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ منزل کی طرف جانا ہوگا۔ جمعیت علما اسلام قوم کو مایوس نہیں کرے گی۔ سیاست میں ہیں تو جیل اور اقتدار بھی راستے میں آئے گا، حکومت میں آجانا میرے نزدیک انقلاب نہیں ہے۔ یہ کمزور بات ہوتی ہے کہ میں اب جیل نہیں جا سکتا تو پھر آپ ایسے میدان میں کیوں ہیں؟ ہمارے بڑوں نے ساری قربانیاں پیچھے ہٹنے نہیں آگے بڑھنے کے لیے دی تھیں۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہمارے ملک پر ناجائز حکومت مسلط کر کے ڈھائی سالوں میں معیشت کو تباہ وبرباد کر دیا گیا۔ کب تک پچھلی حکومتوں پر الزام لگاتے رہو گے، اب ان الفاظ میں طاقت نہیں رہی، اپنی نااہلی تسلیم کرو اور اقتدار چھوڑ دو۔