رحیم یارخان،پسندکی شادی کابھیانک انجام،ماموں نے تین ماہ کی حاملہ زندہ دفنادی

Muhammad Dastagir 12 Mar, 2021 عالمی

رحیم یارخان(نعیم بشیر چوہدری سے) پسند کی شادی کرنے والی لڑکی غیرت کے نام پر موت کی بھینٹ چڑھا دی گئی‘ تین ماہ کی حاملہ مومنہ بی بی کی زمین میں دبی نعش لیاقت پور کے نواحی علاقے سے برآمد۔ تفصیل کے مطابق کوٹ مٹھن ضلع راجن پور کی رہائشی مومنہ بی بی نے گزشتہ سال 20 اپریل کو مظفر گڑھ کے رہائشی خلیل احمد سے پسند کی شادی کی تھی تاہم کچھ ماہ قبل اس کے والدین نے اس سے صلح کر لی جس کے بعد دلہن مومنہ جو تین ماہ کی حاملہ تھی اپنے والدین کی دعوت پر ان سے ملنے کوٹ مٹھن گئی مگر واپس نہ آنے اور موبائل نمبر بند ہونے پر اس کے شوہرخلیل نے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا۔ عدالت کے حکم پر لڑکی کی تلاش شروع کی گئی اور تھانہ کوٹ مٹھن میں دلہن کے ماموں اور کزن کے خلاف مقدمہ درج کرایا گیا جنہوں نے مبینہ طور پر مومنہ کے قتل کا اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ اس کی نعش تحصیل لیاقت پور کے علاقہ دفلی کبیر خان میں دبا دی گئی تھی۔علاقہ مجسٹریٹ سول جج لیاقت پور کی موجودگی میں پولیس نے مذکورہ علاقہ میں زمین کھود کر نعش نکال لی۔ مقتولہ مومنہ کے شوہر خلیل احمد کے مطابق مومنہ کو ویران جگہ پر زندہ دفن کیا گیا جس کی نعش کفن کے بجائے گھر کے کپڑوں میں پائی گئی ہے۔ خلیل احمد نے مطالبہ کیا کہ اس اندوہناک قتل کے ذمہ دار اسکے سسر مختار شاہ سمیت ملوث تمام ملزمان کے خلاف سخت کاروائی کی جائے۔