مظفرگڑھ ،جنگل میں لگنے والی آگ بے قابو،جنگلی حیات کوخطرات

Muhammad Dastagir 12 Mar, 2021 عالمی

مظفرگڑھ( راناامجدعلی امجدسے) مظفرگڑھ کے لاشاری والا جنگل میں لگنے والی آگ بے قابو ،دوسرے روز بھی آگ پر قابو نہ پایا جا سکا،آگ کے شعلے دور تک دکھائی دے رہے ہیں ،لاکھوں روپے مالیت کے درخت جل کر خاکستر، جنگلی حیات کو شدید خطرات لاحق ہوگئے۔تفصیل کے مطابق مظفرگڑھ کی تحصیل کوٹ ادو میں ہیڈ تونسہ بیراج کے مغربی کنارے پر واقع 5 ہزار ایکڑ پر مشتمل جنوبی پنجاب کے سب سے بڑے جنگل میں گزشتہ روز دن کے وقت اچانک آگ بھڑک اٹھی جو تیز ہوا چلنے کے باعث شدت اختیار کرتی جا رہی ہے آگ سے لاکھوں روپے مالیت کے قیمتی درخت جل کر خاکستر ہو چکے ہیں اور جنگلی حیات بھی شدید خطرات کی زد میں ہے لاشاری والا جنگل مختلف اقسام کے لاکھوں پرندوں کا مسکن ہونے کے ساتھ جنگلی جانوروں کی پناہ گاہ بھی ہے اس کے ساتھ یہ جنگل جنوبی پنجاب کو آکسیجن فراہم کرنے کا بھی بہت بڑا زریعہ ہے جنگل کے چاروں اطراف میں دریا ہونے کے باعث فائر بریگیڈ،سول ڈیفنس،اور ریسکیو کی ٹیمیں نہ پہنچ سکنے کی وجہ سے امدادی کاروائیاں تاحال شروع نہ ہو سکی ہیں جس کی وجہ سے مزید درخت جلنے اور جنگلی حیات کے مرنے کے خدشات میں اضافہ ہو چکا ہے تیز ہوا چلنے کی وجہ سے آگ کی شدت میں اضافہ ہو رہا ہے آگ کے شعلے دور تک دکھائی دے رہے ہیں اسسٹنٹ کمشنر کوٹ ادو فیاض علی جتالہ کا کہنا ہے کہ جنگل کے چاروں طرف پانی ہونے کی وجہ سے امدادی کاروائیوں کےلئے زمینی راستہ نہ ہونے کے باعث صرف فضائی آپریشن کے زریعہ ہی آگ پر قابو پایا جا سکتا ہے جبکہ اللہ بخش،خداداد،عبدالرحیم،نزیر احمد اور دیگر مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ جنگل کے چاروں طرف پانی ہے جس کی وجہ سے آگ پر آسانی سے قابو پایا جا سکتا ہے ان کا کہنا ہے کہ سکشن پمپس کے زریعے دریا کے پانی سے آگ بجھائی جا سکتی ہے مقامی لوگوں نے جنگل میں لگنے والی آگ کو انسانی ہاتھوں کی کارستانی کا شبہ ظاہر کرتے ہوئے اسے مبینہ طور پر 2 سیاسی خاندانوں کی جنگل پر قبضے کی کوشش کا نتیجہ قرار دیا ہے یاد رہے کہ اسی جنگل میں 15 دن قبل بھی آگ لگ گئی تھی جس سے 200 ایکڑ پر واقع درخت جل کر خاکستر ہو گئے تھے اور ہزاروں پرندے اور متعدد مویشی بھی جل کر ہلاک ہو گئے تھے ۔دریں اثناء صوبائی وزیر جنگلات سبطین خان نے سیکریٹری جنگلات ساوتھ پنجاب محمد سرفراز خان کو جنگلات کے بارے شکایات کی روک تھام کےلئے 12 مارچ کو طلب کر لیا ہے سیکریٹری جنگلات کو جنگلات کی سرکاری لکڑی چوری ہونے کی عوامی شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے جنگلات کے تحفظ اور لکڑی چوری کے واقعات کے روک تھام بارےلائحہ عمل طے کرنے کےلئے طلب کیا گیا ہے۔