ایمرسن کالج کویونیورسٹی بنانے کیخلاف ملتان پریس کلب کےباہر مظاہرہ

Muhammad Dastagir 07 Apr, 2021 تعلیم

ملتان(سہیل قریشی سے)ملتان کے تاریخی ایمرسن کالج کویونیورسٹی بنانے کیخلاف جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے زیراہتمام ملتان پریس کلب کےباہراحتجاجی مظاہرہ کیاگیا۔مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پنجاب کے وزیر اعلیٰ نے ذاتی دلچسپی لےکر ایک آرڈیننس کے ذریعے سو سالہ تاریخی گورنمنٹ ایمرسن کالج کو ختم کردیا۔جنوبی وسیب کے اس غریب پرور کالج نے نامور شخصیات پیدا کیں جو نا صرف پاکستان بلکہ پوری دنیا میں خدمات سر انجام دے رہی ہیں۔ملتان شہر میں 1951 کے بعد لڑکوں کے لیے ایک بھی نیا کالج نہیں بنا۔وہ کالج جس میں 10 ہزار طلباء وطالبات سستی تعلیم حاصل کر رہے ہیں اسے بغیر سوچے سمجھے ختم کر دیا۔ملتان کے لوگوں سے پہلے بھی ایک تاریخی گرلز کچہری کالج چھین چکے ہیں۔حکومت یونیورسٹی کے نام پر دھوکہ دے رہی ہے۔ حکومت یونیورسٹیاں بنائے مگر غریبوں کے کالج ختم نہ کرے۔ایمرسن کالج کو بحال کیا جائے۔گورنمنٹ ایمرسن کالج ملتان کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ممبران ڈاکٹر طارق بلوچ پروفیسر ارشاد حسین ملک پروفیسر عبدالغنی نیازی ڈاکٹر علمدار نبی ڈاکٹر سلیم اعوان پروفیسر صغیر احمد پروفیسر حافظ ارشاد نے کہا کہ گورنمنٹ جتنی چاہے یونیورسٹیاں بنائے ہمیں اس پر کوئی اعتراض نہیں مگر کالجزکو مت ختم کریں ۔ اس وقت ایمر سن کالج میں ہزاروں غریب طلباء وطالبات زیر تعلیم ہیں ہیں ان کے لیے اعلیٰ تعلیم کے راستے بند نہ کرے۔حکومت پنجاب ایمرسن کالج کو بحال کرے اور یونیورسٹی کو کسی اور جگہ بنا لیں۔