ملک میں17 سال بعد کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس ہوگیا، اسٹیٹ بینک

ilyas shakoori 26 May, 2021 کاروبار

اردو ویب نیوز(ویب ڈیسک) حال ہی میں اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ ملک میں 17 سال بعد کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس ہوا ہے جو معیشت کو طویل عرصے سے جاری خسارے کے باعث پڑنے والے دباؤ سے نکلنے میں مدد کرے گا۔ مالی سال 2020 میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 4 ارب 65 کروڑ 70 لاکھ ڈالر تھا جو رواں مالی سال کے اسی عرصے کے دوران سرپلس میں تبدیل ہوگیا ہے جس سے معیشت کو بیرونی سطح پر، مثلاً غیر ملکی زرِ مبادلہ اور مستحکم ایکسچینج کی صورت میں مستحکم ہونے میں مدد مل رہی ہے۔ پاکستان کا رواں مالی سال کے جولائی سے اپریل کے عرصے میں تجارتی خسارہ 21.6 فیصد بڑھ کر 23 ارب 83 کروڑ ڈالر ہوگیا اس کے باوجود ملک کرنٹ اکاؤنٹ سرپلس رکھنے میں کامیاب رہا۔ مالی سال 2020 میں ملک کا تجارتی خسارہ 19 ارب 59 کروڑ ڈالر تھا۔